پیر - 3 اکتوبر - 2022

انسان احسن التقویم، خدمت خلق پر حافظ عرفان کھٹانہ کا ادارتی نوٹ”مقام انسان.”ڈیلی ویب ڈیسک” کیلئے خصوصی تحریر

مقام انسان (احسن تقویم)

پرانے وقتوں کی بات ہے کی جب سب انسان ایک دوسرے کے غم اور خوشی کو اپنا غم اور خوشی سمجھ کر محسوس کرتے تھے اپنے دکھ درد کو بانٹا کرتے تھے یہ سب باتیں ہمیں اپنے بزرگوں کی زبانی سننے کو ملتی ہیں کہ ہر انسان اپنے کام کاج چھوڑ کر دوسرے انسان کا ہاتھ بٹانے میں فخر محسوس کرتے تھے "نیکی کر دریا میں ڈال” ان کا شیوہ تھا یہ سب سننے کے بعد کچھ پل کے لئے گہری سوچ میں ڈوب جاتے ہیں کہ آخر وہ انسان کیسے ہوں گے؟جو خود نقصان اٹھا کر بھی دوسروں کو فائدہ پہنچاتے تھے آج کے دور میں ایسا کرنے والے کو ہمارے معاشرے میں بے وقوف سمجھا جاتا ہے حقیقت میں اللہ تعالی نے انسان کو اپنے اظہار کے لئے پیدا کیا ساتھ میں اپنی بے پناہ نعمتوں سے مالا مال فرما کر ان نعمتوں کو استعمال کرنے کے لئے بے پناہ صلاحیتیں بھی عنایت فرمائیں تاکہ انسان میری تخلیق کی گئی کائنات کے بارے میں سمجھ سکے بے شک اللہ تعالی نے اپنا تعارف بھی انسان کے ذریعے کرایا ہے دن میں پانچ مرتبہ ہم خالق کائنات سے یہ التجا کرتے ہیں کہ ہمیں سیدھی راہ دکھا یعنی ان انسانوں کی جن پہ تو نے انعامات کی بارش کی بے شک سیدھا راستہ ہی اللہ کا راستہ ہے اللہ تعالی انسان سے بے پناہ محبت کرتا ہے ایسی محبت جس کا دنیا میں کوئی ثانی نہیں ہے انسان جب دوسرے انسان سے ناطہ توڑ کر اللہ سے ملاقات کرنا چاہتا ہے تو خالق کائنات انسان کو حکم دیتا ہے کہ پہلے میرے بندے کو راضی کر میں خود راضی ہو جاوں گا میری رضا میرے بندے کی رضا میں پوشیدہ ہے انسان کو بلند مقام حاصل ہے وہ مقام جس نے فرشتوں کو بھی انسان کے آگے جھکا دیا اللہ فرماتا ہے کہ میری خوشی چاہتے ہو تو میرے بندوں سے پیار کرو اللہ تعالی نے اپنے ذکر کے لئے زبان انسان ،اپنی یاد کے لئے انسانی دل کا انتخاب کیا انسانیت کی خدمت میں اللہ تعالی نے اپنی خوشنودی کو چھپا کر رکھا ہے فرمان الہی ہے کہ میرے بندوں کے خدمت کرو،بھوک میں ہو تو بھوک اگر پیاس میں ہو تو اس کی پیاس کو بجھایا کرو اللہ تعالی کے بارے میں کائنات میں جتنی بھی آگاہی ہے اس کا محور صرف اور انسان ہے جو انسان اللہ تعالی کے قریب ہوتا ہے وہ وہ انسانیت سے بیزار نہیں ہوتا جو انسان انسانیت سے بیزار ہوتے ہیں وہ اللہ تعالی کے قریب نہیں ہوتے مسکین یا بھوکے کو کھانا کھلانے میں اللہ تعالی نے دین کی کوئی قید نہیں رکھی ساری کائنات کی وسیع و عریض تخلیق میں سے سب سے اشرف المخلوق انسان ہے انسان کا مقام یہی ہے کہ اسے "احسن تقویم” بنایا گیا ہے انسانی دل توڑنا اللہ کی ناراضگی کا باعث ہے آج کے دور کی ایک زندہ مثال برائٹ ویژن ویلفیئر فاؤنڈیشن ہے جو چند برسوں سے اپنی مدد آپ کے تحت معاشرے کے نادار اور مستحق افراد کو فری تعلیم اور صحت فراہم کرتی ہے اس موقع پہ اس کے بانی چیئرمین ڈاکٹر حافظ محمد نعمان کا ذکر نہ کروں تو یہ بھی جرم ہو گا ڈاکٹر حافظ محمد نعمان نہایت شفیق اور درد دل رکھنے والے شخص ہیں جن کا دل ہمہ وقت انسانیت کی خدمت کے لئے دھڑکتا رہتا ہے ڈاکٹر صاحب ہمیشہ اس حوالے سے اپنے ساتھیوں کو داد دیتے ہیں جو ہر پل انکی آواز پہ لبیک کہتے ہیں میں سمجھتا ہوں کہ بے شک اللہ تعالی جس سے اپنے بندوں کی خدمت کا کام لینا چاہتا ہے انہیں چن لیتا ہے اللہ تعالی ہم سب کو انسانیت سے پیار کرنے والا بنائے ۔آمین

یہ بھی چیک کریں

تشیع الفاحشہ-تحریر-افشاں نوید

تشیع الفاحشہ-تحریر-افشاں نوید

تشیع الفاحشہ پاکستان بھر کے چینلز کی میڈیا ٹیمیں موٹر وے پہنچی پوئی ہیں۔ پروگرام …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔