منگل - 4 اکتوبر - 2022

صوبہ جنوبی پنجاب کے قیام پر پیش رفت ۔ حکومت نے بل اسمبلی میں پیش کرنے کا فیصلہ کر لیا ۔.ولید بن مشتاق کی رپورٹ

ولید بن مشتاق اسلام آباد ۔
صوبہ جنوبی پنجاب کے قیام پر پیش رفت ۔ حکومت نے بل اسمبلی میں پیش کرنے کا فیصلہ کر لیا ۔
جنوبی پنجاب صوبے کے قیام کا معاملہ۔ تحریک انصاف نے نئے صوبے کے قیام سے متعلق بل اسمبلی میں پیش کرنے کا اعلان کردیا۔وزیر اعظم عمران خان کی زیر صدارت اسلام آباد میں ہو نے والے اجلاس میں صوبہ جنوبی پنجاب کے قیام سے متعلق اہم فیصلے کر لے گئے ۔ذرائع کہتے ہیں اجلاس کے دوران جنوبی پنجاب سے تعلق رکھنے ولے ارکان اسمبلی تقسیم ہوگئے۔ جنوبی پنجاب کا صوبائی دارلحکومت کہاں ہوں گا؟ فیصلہ نہ ہوسکا۔ڈی جی خان اور ملتان ڈویژن کے ارکان نے بہالپور کو صوبائی دارلحکومت بنانے کی مخالف کردی۔بہاولپور سے رکن اسمبلی سمیع الحسن گیلانی نے مزید مشاورت کی تجویز دی تو وزیراعظم نے اتفاق کیا۔جنوبی پنجاب کے صوبائی دارلحکومت سے متعلق فیصلہ آئندہ اجلاس میں متوقع ہے۔اجلاس کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے شاہ محمود قریشی اور معاون خصوصی برائے اطلاعات فردوس عاشق اعوان نے جنوبی پنجاب صوبے کے قیام کیلئے بل اسمبلی میں پیش کرنے کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ اس معاملے پر دیگر سیاسی جماعتوں سے بھی رابطہ کیا جائیگا۔حکومتی ارکان نے بتایا کہ جنوبی پنجاب کے عوام کیلئے سیکریٹریٹ کا فیصلہ ہوگیا جس کے قیام کیلئے ساڑھے 3 ارب روپے درکار ہوں گے۔ 13 ہزار 500 اسامیاں بھی پیدا ہوں گی۔آئندہ ماہ تک ایڈیشنل سیکریٹری اور ایڈیشنل آئی جی جنوبی پنجاب تعینات کئے جائیں گے۔دونوں افسران بہاولپور اور ملتان میں اپنے دفاتر قائم کریں گے۔

یہ بھی چیک کریں

کالعدم تحریک طالبان نے جنگ بندی ختم کردی

پشاور:کالعدم تحریک طالبان پاکستان کی جانب سے یکطرفہ طورپرگذشتہ ایک ماہ سے جاری جنگ بندی …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔