منگل - 4 اکتوبر - 2022

مروٹ 313ہاکڑہ نہر پر پڑنے والا شگاف تقریبا 30 گھنٹے بعد بند کرلیا گیا لیکن انتظامہ کی کارکردگی پر سوال چھوڑ گیا.عرفان قیصر کی رپورٹ

مروٹ 313ہاکڑہ نہر پر پڑنے والا شگاف تقریبا 30 گھنٹے بعد بند کرلیا گیا۔
کسانوں کی گندم کی سیکڑوں ایکڑ تیار فصل مکمل تباہ۔ہوگٸی۔
سیلابی پانی نے کٸی مکان متاثر کیے صادق فاونڈیشن سکول۔اور ڈگری کالج شدید متاثر ہوے۔
عرفان قیصر سے
۔تفصیلات کے مطابق مروٹ 313ہاکڑہ نہر میں شگاف پڑھ گیا تھا ابتداٸی صورتحال مقامی لوگوں نے بہت کوشش کی مگر شگاف بڑھتا چلا گیا انتظامیہ نے ابتداٸی طور پہ کوی خاص ایکشن نہیں لیا جس کی وجہ سے نقصان زیادہ ہوا جب انتظامیہ کو ہوش آیا تو پانی سر سے گزر چکا تھاریسکیو 1122کی ٹیم ریونیو کا ادار محکمہ انہار پولیس اسسٹنٹ کمشنر سب وہاں موجود تھےاہلیان علاقہ کے بھرپورتعاون سے باالاآخر 30 گھنٹوں کی جدجہد کے بعد شگاف پر کرلیا گیا اس میں انتظامیہ کی غفلت سے زیادہ نقصان ہوااگر پہلی فرصت میں اس سارے واقعہ کو سیریس لیاجاتا تو یقینً اس سارے نقصان سے بچا جاسکتا تھا محکمہ انہارکواس وقت ہوش آیا جب پانی سرسے گزرچکاتھا لیکن مروٹ کے لیے لمحہ فکریہ یہ تھا کہ اس موقع پر نہ تو ایم پی اے اور نہ ہی ایم این اے اور کوٸی سیاسی ورکر موقع پر تشریف لایا شگاف تو پر ہوگیا لیکن جن غریب لوگوں کے مکان اور دیواریں گریں اور جن کسانوں کی فصلیں تباہ ہوٸیں ان کا ازالہ کون کرے گا کیا حکومت ان لوگوں کی مالی امداد کرے گی کیا انتظامیہ پھر سے ایسے حادثے سے نمٹنے کے لیے کوٸی خاطر خواہ انتظام کرے گے یہ سب سوالیہ نشان ہے

یہ بھی چیک کریں

پنوعاقل:ا نوجوان شہر آتے ہوئے پراسرار طور پر لاپتہ، موبائل فون بند، ورثا کی جانب سے اغواہ کا شک.

پنوعاقل:ا نوجوان شہر آتے ہوئے پراسرار طور پر لاپتہ، موبائل فون بند، ورثا کی جانب سے اغواہ کا شک

پنوعاقل(رپورٹ عبدالواحد گھوٹو) دادلو تھانہ کی حدود میں قومی شاہراہ پر واقع گاؤں عزت خان …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔