منگل - 4 اکتوبر - 2022

ملائیشیا کے وزیراعظم مہاتیر محمد کی دعوت پر وزیراعظم عمران خا ن آج ملائیشیا کا دورہ کیلئے روانہ ہونگے.دفتر خارجہ

وزیر اعظم عمران خان ملائیشیا کے 2 روزہ دورہ پر آج کوالالمپور روانہ ہوں گے جہا ں وہ ملائشیا کی قیادت سے ملاقاتوں میں باہمی دلچپسی کے امور، علاقائی و بین الاقوامی امن وسلامتی کو درپیش خطرات سمیت مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیوں اور تنازعہ کشمیر کے حل کی اہمیت کو اجاگر کریں گے۔دفتر خارجہ کے مطابق وزیر اعظم عمران خان ملائیشیا کے ہم منصب مہاتیر محمد کی دعوت پر 2 روزہ دورے پر آج کوالالمپور پہنچیں گے، دونوں وزرائے اعظم کے درمیان ون آن ون اور وفود کی سطح پر ملاقات ہوگی، کابینہ کے ارکان اور سینئر حکام سمیت اعلیٰ سطح کا وفد بھی وزیر اعظم کے ہمراہ ہو گا۔

ترجمان دفتر خارجہ کا کہنا ہے کہ وزیر اعظم عمران خان ملائیشیا میں مختلف معاہدوں اور مفاہمت کی یاداشتوں کی تقاریب میں شرکت سمیت مشترکہ پریس کانفرنس اور ملائیشیا کے انسٹی ٹیوٹ آف اسٹرٹیجک اینڈ انٹرنیشنل اسٹڈیز کے ایک تھنک ٹینک سے بھی خطاب کریں گے۔

اے-پی-پی کے مطابق وزیراعظم عمران خان کی جانب سے اگست 2018ء میں وزارت عظمیٰ کا منصب سنبھالنے کے بعد یہ ملائیشیا کا دوسرا دورہ ہے، اس سے قبل وہ 20سے 21نومبر 2018ء کے دوران ملائیشیا کا دورہ کر چکے ہیں جبکہ ملائیشیا کے وزیراعظم مہاتیر محمد نے 21سے 23 مارچ 2019ء کے دوران پاکستان کا دورہ کیا اور وہ یوم پاکستان کی پریڈ کے مہمان خصوصی تھی۔ دونوں وزرائے اعظم کے دوران اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے دوران ستمبر 2019ء میں نیویارک میں بھی ملاقات ہوئی، پاکستان اور ملائیشیا کے دوران قریبی اور خوشگوار تعلقات ہیں جن کی بنیاد یکساں مذہب اور ثقافت ہے جبکہ اس کے ساتھ ساتھ باہمی اعتماد اور مفاہمت ہے، دونوں ممالک کی قیادت کے وژن کی روشنی میں حالیہ سالوں میں دوطرفہ تعلقات مزید گہرے ہوئے ہیں۔ تجارت، سرمایہ کاری، صنعت، دفاع، تعلیم کے ساتھ ساتھ مختلف عالمی فورمز پر دونوں ممالک نے قریبی تعاون کیا ہے۔ وزیراعظم عمران خان کے دورہ سے پاکستان کے ملائیشیا کے ساتھ اقتصادی تعلقات کو مزید مستحکم بنانے اور دوطرفہ تعلقات کو عروج پر لانے کے مواقع میسر آئیں گے۔ دورہ کے دوران وزیراعظم مختلف مواقعوں پرعلاقائی اور عالمی امن اور سلامتی کے حوالے سے پاکستان کے مثبت کردار کو اجاگر کریں گے۔ وہ مقبوضہ جموں و کشمیر میں انسانی حقوق اور انسانی صورتحال پر روشنی ڈالیں گے جبکہ جموں و کشمیر کے تنازعہ کے پرامن حل کی اہمیت پر زور دیں گے جو کہ خطے کے امن اور سلامتی کے لئے بھارتی اقدامات کی وجہ سے درپیش ہے۔ وزیراعظم عمران خان کا یہ دورہ پاکستان اور ملائیشیا کے تاریخی تعلقات کو مزید مستحکم بنانے اور اعلیٰ سطح پر دوطرفہ تعاون کے فروغ میں اہم کردار ادا کرے گا۔

یہ بھی چیک کریں

کالعدم تحریک طالبان نے جنگ بندی ختم کردی

پشاور:کالعدم تحریک طالبان پاکستان کی جانب سے یکطرفہ طورپرگذشتہ ایک ماہ سے جاری جنگ بندی …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔