منگل - 4 اکتوبر - 2022

کرفیو نہیں لگائیں گے ،لاک ڈاؤن سے متعلق حالات دیکھ کر فیصلہ ہو گا ۔وفاقی حکومت کا فیصلہ

ولید بن مشتاق اسلام آباد
فوڈ سپلائی چین مکمل بحال ، تعمیراتی صنعت کے لیے ریلیف پیکیج،غرباء کو فنڈز دیے جائیں گے ۔
وزیراعظم نئے فیصلوں سے متعلق پیر کو ایک اور خطاب میں قوم کو اعتماد میں لیں گے۔۔

وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت تحریک انصاف کی کورکمیٹی کا اجلاس ہوا جس میں کورونا وائرس سے متعلق اہم فیصلے کیے گئے۔بنی گالہ میں ہونے والے اجلاس شاہ محمود قریشی، شیخ رشید، علی امین گنڈا پور، حماد اظہر، جہانگیر ترین ،وزیراعلیٰ عثمان بزدار و دیگر شریک ہوئے۔ کور کمیٹی کے اہم اجلاس میں کورونا وباء سے نمٹنے کیلئے شارٹ ٹرم مڈ ٹرم اورلانگ ٹرم پالیسی طے کی گئی۔ اجلاس میں طے کیا گیا کہ لاک ڈاؤن کو کب تک برقرار رکھنا ہے یہ فیصلہ ملکی حالات دیکھ کر کیا جائے گا۔حکومتی ریلیف پیکیج اور کھانے پینے کی اشیا مستحق افراد تک پہنچانے کیلئے رضاکار فورس اور پارٹی عہدیداروں پر مشتمل کورونا ریلیف ٹائیگرز بنائی جائے گی ۔ پی ٹی آئی کور کمیٹی نے فوڈ سپلائی چین مکمل بحال رکھنے،ہائی ویز و تعمیری شعبے کو ایکٹیو کرنے اور تعمیراتی صنعت سے وابستہ سرمایہ کاروں کیلئے ریلیف پیکیج کی منظوری بھی دے دی۔ اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ ریلوے مسافر ٹرینیں بند اور مال گاڑیاں کی آمد و رفت بحال ہو گی ۔ صوبوں کو گندم و دیگر اجناس کی ترسیل بھی ریل سے کرنے کی ہدایت کی گئی ہے ۔ اجلاس میں وزیراعظم کا کہنا تھا کہ کرونا وائرس سے نمٹنے کے لیے صوبوں اور وفاق میں ہم آہنگی ہے،حکومت نے ہنگامی حالات میں تمام تر ملکی وسائل استعمال کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ حکومت کی ساری توجہ غریب و نادار طبقہ اور دیہاڑی دار مزدور پر ہے ذخیرہ اندوز باز نہ آئے تو انکے خلاف سختی کی جائے گی۔

یہ بھی چیک کریں

کالعدم تحریک طالبان نے جنگ بندی ختم کردی

پشاور:کالعدم تحریک طالبان پاکستان کی جانب سے یکطرفہ طورپرگذشتہ ایک ماہ سے جاری جنگ بندی …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔