پیر - 3 اکتوبر - 2022

کرونا وائرس:حرمین الشریفین میں زائرین پر عارضی پابندیاں اور ہماری ذمہ داریاں

جیسا کہ میڈیا رپورٹ سے سامنے آرہا ہے کہ سعودی عرب میں کرونا وائرس کے پانچ کیس سامنے آچکے ہیں.حکومت اور سیکیورٹی اداروں سمیت محکمہ صحت بھی اس عالمی وباء سے بچاو کے لئے تمام تر اقدامات و وسائل بروئے کار لارہے ہیں .عمرہ زائرین پر پابندی اور اس میں توسیع صرف اور صرف احتیاطی پہلو ہیں.مملکت کے شہریوں اور تارکین وطن پر پابندی بھی اسی سلسلے کی کڑی ہیں .حکومت سعودیہ کی بھر پور کوشش ہے کہ ہجوم کی جگہ پہ اس وائرس کے پھیلاو کو ہر ممکن طریقہ سے روکا جا سکے.خانہ کعبہ میں طواف کو نچلے حصے سے بند کردیا اور طواف پہلے اور دوسرے حصے پہ جاری ہے
خانہ کعبہ کی صفائی اور دیگر احتیاتی اقدامات کیا جا رہے ہیں تاکہ وائرس سے لوگوں محفوظ رکھا جائے -مطاف اور(مدینہ) باب السلام کو
صرف اورصرف اہتمام صفائی کے لئے وقتی طورپر بند کیا گیاہے الحمداللہ حرم پاک میں طواف اور سعی اب بھی جاری ھےاور بارگاہ رسالت مآب صلی اللہ علیہ وآلہٖ وسلّم میں بھی خوش نصیبوں کی حاضری جاری ھے
براہ کرم حرمین شریفین کے حوالے سے بغیر تصدیق کوئی بھی پوسٹ شیئر نہ کریں ۔۔۔جزاکم اللہ۔۔
شہریوں ، تارکین وطن کے ساتھ ساتھ عازمین اور زائرین کی زیادہ سے زیادہ حفاظت کو یقینی بنانے کے لئے کورونا وائرس کے خلاف جو احتیاطی اقدامات اٹھائے ہیں۔، "یہ اقدامات ان کوششوں کی تکمیل کے لئے اٹھائے گئے تھے جس کا مقصد شہریوں ، رہائشیوں اور ریاست کے علاقوں میں آنے والے تمام افراد کو عمرہ ادا کرنے کیے گے ہیں ،سرکاری اداروں کے ساتھ مل کر وائرس پر قابو پانے ، کسی بھی معاشی بدحالی کی پیروی کرنے اور اس سے نمٹنے کے لئے ضروری انتظامات کیے جا رہے ہیں.
صحن حرم میں طواف کعبہ کی عارضی پابندی مسلمانوں کی بہتری کے لئے ہے .مایوسی اور دل شکستہ ہونے کی ضرورت نہیں خانہ خدا میں طواف کا با الکل موقوف ہونے کا تصور نہیں کیا جاسکتا.یہ سلسلہ جاری تھا،ہے اور جاری رہے گا .ہمارا ایمان ہے کہ اس سلسلہ کو ملائکہ اور فرشتے جاری و ساری رکھے ہوئے ہیں .بحثیت مسلمان ہمیں‌اپنی غلطیوں گناہوں کا ادراک کرکے باری تعالیٰ کے حضور عاطفیت کا طلبگار ہونا چاہے.حضرت محمدﷺ کی امت مسلمہ کے لئے مانگی گئی دعاؤں پہ ہمارا ایمان ہونا چاہئے.

یہ بھی چیک کریں

تشیع الفاحشہ-تحریر-افشاں نوید

تشیع الفاحشہ-تحریر-افشاں نوید

تشیع الفاحشہ پاکستان بھر کے چینلز کی میڈیا ٹیمیں موٹر وے پہنچی پوئی ہیں۔ پروگرام …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔