پیر - 3 اکتوبر - 2022
کورونا وائرس،اللہ کی بے آواز لاٹھی تحریر ۔حافظ عرفان کھٹانہ

 

کورونا وائرس،اللہ کی بے آواز لاٹھی

تحریر ۔حافظ عرفان کھٹانہ

1440ء سال قبل سرور کائنات صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی عطا کردہ ہدایات کو آج کے ماہرین ڈاکٹرز اور سائنسدان  ماننے پہ مجبور ہو گے مسلمان ہونے کے ناطے ہمارا یہ ایمان ہے کہ آپ نے جو فرمایا وہ حق و سچ یے مدینہ میں جب طاعون کے وبا پھیلی تو آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے اس مرض میں مبتلا ہونے والے افراد کو اپنا شہر چھوڑنے سے منع فرمایا تاکہ یہ مرض دوسرے علاقوں میں صحت مند افراد میں منتقل نہ ہو مسلم شریف کی جلد نمبر 2 میں حضرت اسامہ رضی اللہ تعالی عنہ سے روایت ہے آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے فرمایا کہ طاعون اور متعدد بیماری ایک عذاب الہی ہے جو پہلی امتوں پر مسلط کیا گیا جب کسی علاقے یا شہر میں کوئی وبا پھیل جائے تو ضروری ہے کہ متاثرہ شہر کے باشندے اپنا علاقہ چھوڑ کر نہ جائیں تو یہ بھی ضروری ہے کہ دوسرے شہر کے لوگ متاثرہ شہر یا علاقے میں نہ جائیں جو ہدایات آپ نے 1440ء سال پہلے فرمائی دنیا کے ماہرین کو آج بھی حق ماننے پہ مجبور کر رہی ہیں وائرس کا لفظ دراصل لاطینی اور اس سے قبل یونانی زبان سے آیا ہے جس کا مفہوم زہر ہے وائرس آزاد زندگی قائم نہیں رکھ سکتے یہ صرف کسی دوسرے جاندار خلیہ کا ڈی این اے یا این اے استعمال کر کے ہی اپنی تکرار کر سکتے ہیں وائرس حیاتی اجسام میں انفیکشن پیدا کرتا ہے وائرس کی خلیاتی ساخت ایسی نہیں ہے کہ وہ لحمیاتی ترکیب کے ذریعے اپنی تولید کر سکیں، اپنی کاپی بنا سکیں یا اپنی تعداد میں اضافہ کر سکیں وائرس سے مختلف طرح کی بیماریاں پیدا ہوتی ہیں طفیلی صفت کی وجہ سے انسانوں اور جانوروں کے ساتھ بیکڑیا میں بھی کئی بیماروں کی وجہ بنتے ہیں ان میں نزلہ زکام،پولیو،فلو،ایڈز،برڈفلو اور کورونا وائرس شامل ہیں چین میں سانس کی بیماری کا باعث بننے والے وائرس کے متعلق عالمی ادارہ صحت نے تحقیق کے بعد اس کو کورونا وائرس کا نام دیا ہے سن 2002 میں چین میں کورونا وائرس کی وجہ سے 774 افراد ہلاک ہوئے مجموعی طور پر اس 8098 افراد متاثر ہوئے تھے کورونا وائرس کی بہت سی اقسام ہیں لیکن ان میں سے چھ اور اس حالیہ وائرس کو ملا کر سات ایسی قسمیں ہیں جو انسانوں کو متاثر کرتی ہیں اس کی وجہ سے بخار ہوتا ہے سانس کی نالی میں شدید مسئلہ ہوتا ہے جس سے سانس لینے میں کافی دشواری ہوتی ہے اس نئے وائرس کے جنیاتی کوڈ سے یہ معلوم ہوتا ہے کہ یہ رسپائریڑی سنڈروم(سارس) سے  ملتا جلتا ہے یہ وائرس کی نئی قسم سامنے آئی ہے جو انسانوں میں پہلے کبھی نہیں پائی گئی  اس لئے اب تک کوئی ایسی ویکسین بھی سامنے نہیں آئی جو اس وائرس کے خلاف کار آمد ثابت ہو محققین ویکسین تشکیل دینے کے لئے دن رات ایک کر رہے ہیں چینی حکام اور عالمی ادارہ صحت کی جانب سے اس وقت صرف چین کے شہر ووہان آنے جانے پر پابندی ہے ووہان شہر کی آبادی 10 ملین سے زیادہ ہے جس کو مکمل لاک ڈاون کر دیا ہے اس سے باہر جانے اور اندر آنے سے روک دیا گیا ہے وہاں پہ موجود گوشت کی مارکیٹ کو بند کر دیا گیا ہے جہاں پہ سانپ،چمگاڈر ،بلی اور کتے وغیرہ کا گوشت بیچا جاتا ہے انسانوں میں اس وائرس کے پہلے کیسز چین کے شہر ووہان میں  دسمبر کے مہینے میں سامنے آئے اس وائرس کے افزائش میں یعنی انفیکشن ہونے سے اور علامات نظر آنے تک چند دن لگتے ہیں ماہرین کا کہنا ہے کہ شروع میں یہ وائرس جانوروں سے انسانوں میں منتقل ہوا کورونا وائرس کی وجہ اب تک 22 ممالک متاثر ہوئے ہیں جس میں سر فہرست چین ہے اس کے بعد تھائی لینڈ،چاپان،ہانگ کانگ،سنگاپور،تائیوان،آسٹریلیا،

ملیشیاء،ماسکو،ساوتھ کوریا،امریکہ،فرانس،ویتنام ،جرمنی،عرب امارات،کینیڈا،نیپال،فن لینڈ،فلپائن،انڈیا اور سری لنکا شامل ہیں

عالمی رپورٹ میں یہ ممالک شامل ہیں اس وقت کورونا وائرس کی وجہ سے 10000 سے زائد افراد متاثر ہو چکے ہیں 200 سے زائد افراد کی ہلاکتیں ہو چکی ہیں  کورونا وائرس کی وجہ سے 80 فیصد لوگ چین میں متاثر ہوئے 20 فیصد لوگ دوسرے 21 ممالک میں متاثر ہوئے ہیں اس وائرس کے جنم لینے کی جو وجوہات سامنے آئی ہیں وہ سانپ،چوہے ،چمگاڈر اور بلی کا گوشت استعمال کیا جاتا ہے یہ وائرس ووہان کی گوشت کی مارکیٹس سے آیا ہے جہاں پہ یہ سب بیچا جاتا ہے بے شک اسلام نے 1440 سال قبل حرام و حلال میں فرق واضح کر کے ان سب حرام اشیاء سے دور رہنے کی تلقین بھی کی یہ انسان کے لئے ٹھیک نہیں ہے یہ کہنا بھی ضروری سمجھتا ہوں کہ اس وقت اسلام کے خلاف سازش کرنے والی طاقتیں مسلانوں کو دہشت گرد کہنے کے لئے بھر پور ناکام کوششیں کر رہی ہیں پوری دنیا میں نہتے مظلوم انسانوں پہ ظلم کے پہاڑ  گرائے جا رہے ہیں جس کی زندہ مثال کئی برسوں سے کشمیر،فلسطین،برما،شام ،چین اور بھی کئی ممالک میں مسلمانوں پہ ظلم و تشدد کیا جا رہا ہے  مسلمانوں کو عبادت گاہوں میں جانے سے روکا جاتا ہے جس پہ عالمی میڈیا اور عالم اسلام خاموش بیٹھا ہوا ہے جس پہ انسانی حقوق کے علمبردار کبوتر کی طرح آنکھیں بند کئے ہوئے یہ سوچ رہے ہیں کہ ہمیں کوئی پوچھنے والا نہیں ہے عین وقت خالق کائنات نے اپنی بے آواز لاٹھی چین میں کرونا وائرس کی صورت میں نازل فرما کر دنیا کو خبردار کر دیا ہے کہ دنیا کا نظام چلانے والا بھی موجود ہے جس نے یہ کائنات بنائی ہے جس کی نظر سے کائنات کا ایک ذرہ بھی اوجھل نہیں ہو سکتا اس وقت ماہرین اس دوڑ میں مصروف ہیں کہ اس کا کوئی حل نکالا جائے تاکہ اس پہ بھر وقت قابو پایا جا سکے آخر کار انکو اسلام سے ہی مدد لینی پڑی وجہ تخلیق کائنات سرور کونین سرکار دو عالم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی ہدایات پہ عمل کرنا ہی پڑا جو آپ نے ہزاروں سال پہلے عطا فرما دی ہمارا ایمان ہے کہ اسلام پوری دنیا میں سچا دین ہے جس نے ہمیں دین و دنیا میں جینے کا سلیقہ سیکھایا دین و دنیا کی روشنی سے مالا مال فرمایا اس وقت پوری امت مسلمہ کو اتحاد و اتفاق کی ضرورت ہے کورونا وائرس سے بچنے کے لئے باقاعدہ پانچ وقت نماز پابندی کی جائے اللہ تعالی کی بارگاہ میں استغفار کثرت سے کیا جائے صفائی کا خاص خیال رکھا جائے حلال و حرام میں فرق کیا جائے ۔ان شاءاللہ کسی قسم کا وائرس آپ کو نقصان نہیں پہنچا سکتا ہے

یہ بھی چیک کریں

آزمائش میں کامیابی-

آزمائش میں کامیابی-محمد عرفان صدیقی

میں آدھے گھنٹے سے اس کے ڈرائنگ روم میں بیٹھا اس کا انتظار کررہا تھا …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔